28-07-2017

سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاناما کیس کے فیصلے میں وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دیتے ہوئے نیب کو نواز شریف اور ان کے بچوں کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا حکم دے دیا۔جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس گلزار احمد، جسٹس اعجاز افضل، جسٹس شیخ عظمت سعیداور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل 5 رکنی لارجر بینچ نے 21جولائی کو 3رکنی بینچ کی جانب سے محفوظ کیا گیا فیصلہ پڑھ کر سنایا،جس میں وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دےدیا گیا۔اپنے فیصلے میں سپریم کورٹ نے نیب کو حکم دیا ہے کہ نواز شریف کے خلاف 6 ہفتوں میں ریفرنس دائر کیا جائے۔سپریم کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ مریم ،حسن ،حسین نوا زاور کیپٹن صفدرکے خلاف بھی نیب ریفرنس دائر کیا جائے۔سپریم کورٹ نے صدر مملکت کو آئین کے تحت جمہوری عمل کو آگے بڑھانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر مملکت جمہوری عمل کو یقینی بنانے کیلئے  اقدامات کریں۔

واضح رہے کہ جسٹس اعجاز افضل خان ، جسٹس عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل 3 رکنی بینچ کے روبرو جے آئی ٹی نے10 جولائی کو اپنی رپورٹ پیش کی تھی عدالت نے 5 سماعتوں کے دوران رپورٹ پر فریقین کے اعتراضات سنے اور 21 جولائی کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔