07-04-2017

پشاور ہائی کور ٹ نے خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن کو  کمیشن کے تحت ہونے والے امتحان میں زون پانچ سے درخواست دینے والی لیڈی ڈاکٹر کے نتائج جاری کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔

جسٹس روح الاآمین خان اور جسٹس سید افسر شاہ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ایبٹ آباد سے تعلق رکھنے والی لیڈی ڈاکٹر  کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزارہ نے زون پانچ سے میڈیکل آفیسر  کی پوسٹ کےلئے پبلک سروس کمیشن  کو درخواست دی اور ٹیسٹ و انٹرویو کوالیفائی کرنے کے باوجود یہ پوسٹ انہیں یہ کہہ کر نہیں دی گئی کہ درخواست گزاری کا خاوند ڈاکٹر تعیم جان کا تعلق فاٹا سے ہے اس بناء پر وہ فاٹا زون سے درخواست دے گی حالانکہ پبلک سروس کمیشن کے قوانین کے تحت جب تک خاتون نے شوہر کے نام پر شناختی کارڈ حاصل نہ کیا ہو وہ اپنے والدین کے زون سے درخواست دے سکتی ہے لہذا  پبلک سروس کمیشن کے اس فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے فاضل عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر دائر رٹ پٹیشن منظور کر لی اور درخواست گزارہ کا زون پانچ سے نتائج جاری کرنے کے احکامات جاری کردیئے ۔