25-04-2018

پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس اعجازانورپرمشتمل دورکنی بنچ نے پشاوریونیورسٹی میں76پروفیسرزاورایسوسی ایٹ پروفیسرزکی بھرتی کے خلاف دائررٹ پروائس چانسلرسے جواب طلب کیاہے۔

عدالت کو بتایاگیاکہ جامعہ پشاورنے یونیورسٹی میں76 پروفیسرزکی بھرتی کے لئے اشتہارجاری کیاہے۔درخواست گذار پشاوریونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کرچکے ہیں اور انہیں نظراندازکیاگیاہے۔ ان بھرتیوں کے لئے پوسٹ الوکیشن کمیٹی قائم کی گئی ہے جس کا یونیورسٹی قواعدوضوابط میں کوئی ذکرنہیں جبکہ بھرتی کااختیارصرف سینڈیکیٹ کو ہے اورپوسٹ الوکیشن کمیٹی غیرآئینی اورغیرقانونی ہے لہذانئی بھرتیوں کااشتہارکالعدم قرار دیا جائے۔

دورکنی بنچ نے حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے وائس چانسلرسے جواب طلب کرلیا۔