28-03-2018

پشاورہائی کورٹ نے وفاقی اورصوبائی حکومتوں سے شہداء کے لواحقین کو ملنے والی شہداء پیکج کی تفصیلات طلب کرلی ہیں۔

ہائی کورٹ پشاور کے جسٹس قیصررشید اورجسٹس محمدایوب خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے سانحہ آرمی پبلک سکول پشاور کے شہید طالبعلم کے والداجون خان کی جانب سے محمدایازخان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائررٹ پر سماعت کی۔ اس موقع پر خیبرپختونخواحکومت کی جانب سے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سکندر عدالت میں پیش جبکہ جسٹس قیصررشید نے اس موقع پر اپنے ریمارکس میں کہاکہ حکومت اے پی ایس شہداء کے معاملے کو جلداز جلد حل کرے اے پی ایس واقعہ ایک قومی سانحہ ہے اس سے بڑا دردناک واقعہ کوئی اور نہیں ہوسکتا۔اس موقع پر درخواست گذار کے وکیل نے عدالت کو بتایاکہ شہید ہونے والے بچوں کے والدین کو 20 لاکھ روپے ملے ہیں جبکہ سانحے میں شہید ہونے ملازمین کو 9.5 ملین روپے ملے ہیں، ملازمین کو زیادہ پیکچ دیا گیا اور شہید ہونے والے بچوں کے والدین کو کم دیا گیا۔ جس پرفاضل بنچ نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے شہیداء پیکچ کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے سماعت اگلی پیشی تک ملتوی کردی