06-04-2018

پشاور ہائی کورٹ نے پشاور بھر میں گندگی ٹھکانے لگانے کےلئے جگہ کا تعین کرنے کےلئے صوبائی حکومت کو آخری مہلت دیتے ہوئے اس ضمن میں پراگرس رپورٹ پچیس اپریل کو طلب کرلیا ہے ۔

جسٹس قیصر رشید اور جسٹس سید ارشد علی پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے د ورکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ  صوبائی حکومت نے گزشتہ چار سال  کے عرصے کے دوران پشاور کی گندگی کو ٹھکانے لگانے کےلئے جگہ مختص نہیں کی اور اس ضمن میں کوئی اقدامات نہیں اٹھائے گئے جس کے باعث شہر میں مختلف امراض پھیل رہے ہیں ۔دوران سماعت ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت کوبتایا کہ حکومت نے جلوزئی کے قریب چھ سو کنال اراضی خریدی ہےاور جلد ہی اس پر فضلات کو ٹھکانے لگانے کا پلانٹ تعمیر کر دیا جائے گا۔ عدالت نے فوری طور پر پلانٹ لگانے کےلئے جگہ مختص کرنے اور اس ضمن میں پراگرس رپورٹ عدالت میں پیش کرنے کے احکامات جاری کرکے سماعت  پچیس اپریل تک ملتوی کردی ۔