19-01-2017

پشاور ہائی کورٹ نے رکن صوبائی اسمبلی حلقہ پی کے ون پشاور ضیاء اللہ آفریدی کی جانب سے صوبائی حکومت پشاور میں ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کےلئے فنڈز مختص کرکے کام شروع کرنے کےلئے دائر رٹ پٹیشن پر صوبائی حکومت سے جواب طلب کرکے سماعت اکیس فروری تک ملتوی کردی ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ پشاور صوبہ کا دارالحکومت ہے تاہم صوبائی حکومت صوبے کے اس اہم شہر کو ترقیاتی امور میں یکسر نظر انداز کر رہی ہے جبکہ پشاور کی ترقی کےلئے جو فنڈز مختص ہوئے تھے وہ بھی دیگر اضلاع کو منتقل کئے جا رہے ہیں جو اس ضلع کے ساتھ زیادتی کے مترادف ہے لہذا پشاور کے لئے ترقیاتی فنڈز کے اجراء کے ساتھ ساتھ ترقیاتی منصوبے شروع کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔