09-11-2017

صوبائی دارالحکومت پشاورسمیت صوبہ بھرمیں بڑھتی ہوئی فضائی آلودگی کے خلاف پشاورہائی کورٹ میں رٹ پٹیشن دائرکردی گئی ہے۔ رٹ پٹیشن میں فضائی آلودگی کے خاتمے کے لئے عوام میں شعوراجاگر کرنے کے لئے اقدامات اٹھانے ٗ شجری کاری کرنے اورنصابی کتابوں میں مضامین شامل کرنے کی استدعا کی گئی ہے ۔یہ رٹ پٹیشن خورشید خان ا یڈوکیٹ نے دائرکی ہے جس میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ بین الاقوامی سروے کے مطابق فضائی آلودگی کی وجہ سے مہلک بیماریاں پھیل رہی ہیں۔رٹ میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ پشاورشہرمیں ٹرانسپورٹ کے لئے جفت اورطاق کافارمولااختیار کیاجائے اورحکم صادر کیاجائے کہ شہرمیں10سال سے پرناماڈل کی ٹرانسپورٹ گاڑیوں پرپابندی لگائی جائے اور2ہزار سی سی بڑی ڈیزل گاڑیوں پرپابندی عائد کرکے ان کی رجسٹریشن نہ کی جائے ۔تمام صنعتی بستیوں میں تمام صنعتوں کو فضائی آلودگی سے بچاؤ کی تدابیر بتائی جائیں اورپھراس پرسختی سے عمل کرایا جائے اینٹوں کے بھٹے ٗ فیکٹریوں میں ٹائرجلانے پرپابندی عائد کی جائے جبکہ گھٹیاکوئل کے استعمال پرپابندی ہوگرین ہاؤس گیسز خارج کرنے والے کارخانوں کو فوری بند کیاجائے