01-03-2017

پشاور ہائی کورٹ نے محکمہ انکم ٹیکس کو صوبائی دارلحکومت پشاور میں واقع کارخانوں اور انڈسٹریز کے خلاف تیس اپریل تک کسی بھی قسم کی کاروائی سے روکتے ہوئے ایف بی آئی اور ڈائریکٹر انویسٹی گیشن اینڈ انٹیلی ایجنسی  کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ  جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ سترہ فروری دو ہزار سترہ کو محکمہ انکم ٹیکس نے درخواست گزار صعنت کاروں کے دفاتر پر بغیر کسی نوٹس کے چھاپے مارے اور ان کی اہم دستاویزات اور کمپیوٹرز اپنے ساتھ لے گئے جو کہ ایک غیر قانونی اقدام ہے اس لئے فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ محکمہ انکم ٹیکس کو بغیر نوٹس کے چھاپے جو کہ غیر قانونی ہے سے روکا جائے ۔