25-08-2017

پشاور ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ پشاور میں ڈینگی میں اضافہ تشویشناک صورتحال اختیار کر چکا ہے لہذا صوبائی حکومت کو اس کا سنجیدگی سے نوٹس لینا چاہیے اور یہ عوامی مفاد کا مسئلہ ہے اسے سیاسی مسئلہ نہ بنایا جائے کیونکہ اب تک سینکڑوں افراد متاثر ہو چکے ہیں ۔

جسٹس عبد الشکور اور جسٹس سید عتیق شاہ پر مشتمل پشاو رہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے ڈینگی مرض میں اضافے کے خلاف دائر رٹ درخواست کی سماعت کی ۔ ڈپٹی کمشنر پشاور نے عدالت کوبتایا کہ صوبائی حکومت کی ہدایات کی روشنی میں ڈینگی کے روک تھام کےلئے خصوصی اقدامات کئے جا رہے ہیں اور عوام کی آگاہی کےلئے بھی  خصوصی مہم شروع کی گئی ہے۔ درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ تہکال کے علاقے میں صرف سپرے کیا جا رہا ہے اور باقی کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے جبکہ صوبائی دارلحکومت میں ڈینگی کا مرض بتدریج بڑھ رہا ہے ۔

عدالت نے پنجاب حکومت کی جانب سے بھجوائی گئی محکمہ صحت ٹیم کے سربراہ ایڈیشنل ڈائریکٹر ہیلتھ پنجاب کو اگلی پیشی پر طلب کر لیا جبکہ تہکال کے رہائشی سابق صدر پشاورہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن محمدعیسی خان ایڈوکیٹ نے رٹ میں فریق ببنے کی درخواست بھی منظور کر لی اور سماعت اگلی تاریخ تک ملتوی کردی ۔