04-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے پشاور کالج آف انجنیئرنگ کو اگلی پیشی سے قبل اسی طلباء کے چار سالہ تعلیمی اخراجات واپس کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے قرار دیا ہے اس کے بعد ان کی نظر ثانی کی اپیل کی سماعت کی جائے گی کیونکہ اس حوالےسے عدالت جامع فیصلہ دے چکی ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس روح الاآمین خان پر مشتمل د ورکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی۔

دوران سماعت پشاور کالج آف انجنیئرنگ کے وکیل نے موقف اپنایا کہ انہیں اپنے کیس پر بحث کےلئے وقت دیا جائے کیونکہ اس حوالے سے عدالت کے ابتدائی فیصلے کے خلاف نظر ثانی کی اپیل دائر کی گئی ہے ۔

عدالت نے دلائل کے بعد پشاور کالج آف انجینئرنگ کو حکم دیا کہ وہ اسی طلباء کو تعلیمی اخراجات واپس کرے  اس کے بعد ہی نظر ثانی اپیل کی سماعت کی جائے گی ۔