25-01-2017

پشاور ہائی کورٹ نے پشاور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کو  توہین عدالت کی درخواستوں سمیت مختلف امور کے حوالے سے ہائی کورٹ  کے جاری کردہ احکامات پر تین مارچ تک عمل درآمد کو یقینی بنانے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں بصورت دیگر ڈائریکٹر جنرل پی ڈی اے خود عدالت میں پیش ہو کر جواب دیں گے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل د ورکنی بنچ نے یہ احکامات  دائر توہین عدالت درخواست کی سماعت کے دوران جاری کئے۔

عدالت کو بتایا گیا کہ عداتل نے پی ڈی اے بلڈنگ کنسٹرکشن کمپنی کے دفاتر سیل کرنے کے اقدام کے خلاف رٹ پر  تیرہ جنوری دو ہزار سترہ کو  ان دفاتر کی سربمہری ختم کرنے احکامات جاری کئے تاہم عدالتی احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا جا رہا جو توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے لہذا ڈی جی پی ڈی اے سمیت متعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی عمل میں لائی جائے ۔