01-03-2017

پشاور ہائی کورٹ نے کم عمر بچوں کے لئے چائلڈ پروٹیکشن کمیشن کی غیر فعالیت کے خلاف دائر رٹ پر صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ خیبر پختونخوا میں بچوں کے حوالے سے قوانین تو وضع کئے گئے ہیں لیکن ان پر عمل درآمد کہیں بھی نظر نہیں آرہا ہے جس کی وجہ سے معاشرے میں چائلڈ لیبر ، بچوں پر جنسی تشدد اور انہیں نشے کا عادی بنانے میں آئِے دن اضافہ ہو رہا ہے۔ عدالت کو بتایا گیا کہ اس ضمن میں چائلڈ پروٹیکشن کمیشن تو قائم کیا گیا ہے لیکن ابھی تک اس ضمن میں کوئی کمیٹی نہیں بنائی گئی جس کی وجہ سے یہ ادارہ غیر فعال ہے۔اس لئے فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ کم عمر بچوں کی پروٹیکشن کے لئے قائم چائلڈ پروٹیکشن کمیشن کو عملی طور پر فعال کیا جائے تاکہ کم عمر بچوں کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے ۔