09-10-2017

 سپریم کورٹ میں کرپشن مقدمات میں ملزمان کی طرف سے رقوم کی رضاکارانہ واپسی پر رہائی کے معاملے کے حوالے سے لئے گئے از خود نوٹس کیس کی سماعت گیارہ اکتوبر کو ہوگی ۔

سپریم کورٹ کے جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں جسٹس عظمت سعید اور جسٹس سجاد علی شاہ پر مشتمل تین رکنی خصوصی بنچ  سماعت کرے گا۔

سماعت کے دوران نیب آرڈیننس کی سیکشن پچیس اے کے تحت چیئرمین قومی احتساب بیورو کے اس اختیار کا جائزہ لیا جائے گا جس کے تحت بدعنوانی کے الزام میں گرفتار افراد کی طرف سے رضاکارانہ طور پر بدعنوانی کی رقوم واپس کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے خلاف کاروائی روک دی جاتی ہے جس کے پیش نظر سپریم کورٹ نے کرپشن کے مقدمات میں رقوم کی رضاکارانہ واپسی پر ملزمان کی بریت کے حوالے سے از خود نوٹس لیا ہے۔