24-08-2017

چیف جسٹس آزاد کشمیر ہائی کورٹ جسٹس تبسم آفتاب علوی نے خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور کا دورہ کیا اور جوڈیشل اکیڈمی پشاور کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ بہت جلد آزاد کشمیر جوڈیشل اکیڈمی اور خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور کے درمیان ایک ایم او یو پر دستخط کئے جائیں گے ۔

چیف جسٹس آزاد کشمیر کے دورہ جوڈیشل اکیڈمی پشاور کے موقع پر پشاور ہائی کورٹ کے جج جسٹس لعل جان خٹک بھی ان کے ہمراہ تھے جبکہ ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی پشاور محمدمسعود خان اور سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن جوڈیشل اکیڈمی محمدآصف خان نے ان کا استقبال کیا جبکہ انہیں اکیڈمی سے متعلق بریفینگ بھی دی گئی ۔

بریفنگ کے دوران ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے چیف جسٹس آزاد کشمیر ہائی کورٹ  کو جوڈیشل اکیڈمی پشاور آمد پر خوش آمدید کہتے ہوئے بتایا کہ خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں نہ صرف ضلعی عدالتوں کے ججز صاحبان کو ٹریننگ پروگرامز کرائے جاتے ہیں بلکہ نظام انصاف سے منسلک تمام سٹیک ہولڈرز  جن میں پولیس بھی شامل ہے ، کےلئے مختلف کورسز کے ذریعے تربیتی پروگرامز منعقد کئے جارہے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ اب تک ایک ہزار نو سو پچھتر جوڈیشل افسران ، دو سو پراسیکیوٹرز اور چھ سو نوے وکلاء جن میں سو سے زائد ینگ وکلاءشامل ہیں کی مختلف کورسز کے ذریعے تربیت مکمل کی گئی ہے اون ٹریننگ پروگرامز کے کورسز کو اکیڈمک سے بڑھ کر شرکاء کے سکیلز کو تقویت دینے پر مرکوز کیا گیا ہے ۔ ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے بتایا کہ خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور نے مختلف اداروں کے ساتھ ایم او یو سائن کئے ہیں جن میں پنجاب جوڈیشل اکیڈمی بھی شامل ہے اور ان کی جانب سے پنجاب کے جوڈیشل افسران کےلئے ٹریننگ کورس مرتب کیا گیا ہے ۔

اس موقع پر چیف جسٹس آزاد کشمیر ہائی کورٹ جسٹس تبسم آفتاب علوی نے جوڈیشل اکیڈمی پشاور آمد پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل اور سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن جوڈیشل اکیڈمی پشاور کا شکریہ ادا کیا ۔انہوں نے جوڈیشل اکیڈمی پشاور کے ساتھ مختلف امور پر ایم او یو پر دستخط کرنے کے ارادے کا اظہار کرتے ہوئےکہا کہ آزاد کشمیر جوڈیشل اکیڈمی کا فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی کے ساتھ ایک ایم او یو ہوا ہے جس میں آزاد کشمیر کے جوڈیشل افسران کےلئے دو فیصد کوٹہ بھی مقرر کیا گیا ہے ۔ بعد ازاں چیف جسٹس آزاد کشمیر ہائی کورٹ نے جوڈیشل اکیڈمی پشاور کے مختلف وینگز جن میں ریڈیو میزان ، ریسرچ ونگ ، لائبریری اور کلاس رومز سمیت دیگر وینگز کا معائنہ بھی کیا اور جوڈیشل اکیڈمی کی کارکردگی کو سراہا جبکہ اکیڈمی کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے انہیں سوینئر بھی پیش کیا ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔