28-04-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ایم ٹی آئی لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور میں کنسلٹنٹ کی پوسٹ پر بھرتی ڈاکٹروں کے تقررناموں پر اسسٹنٹ پروفیسر اور ایسوسی ایٹ پروفیسر درج کرنے کے خلاف دائر رٹ منظور کر لی اور بھرتی ہونے والے افراد کو کنسلٹنٹ کے تقررنامے جاری کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔

لیڈی ریڈنگ ہسپتال کے اسسٹنٹ پروفیسر موسی کلیم اور دیگر کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن میں موقف اپنایا گیا کہ ایل آر ایچ پشاور میں کنسلٹنٹ /اسسٹنٹ پروفیسر/ایسوسی ایٹ پروفیسر اور پروفیسر لیول کی پوسٹیں مشتہر کی گئی تھیں اور اس کےلئے ٹیسٹ و انٹرویو کے بعد تقرریاں کی گئیں تاہم جن امیدواروں کی تقرری عمل میں لائی گئی ہے ان کے تقرر ناموں پر کنسلٹنٹ کی بجائے اسسٹنٹ پروفیسر اور ایسوسی ایٹ پروفیسر درج ہے حالانکہ اشتہار میں یہ واضح طور پر درج تھا کہ یہ پوسٹیں کنسلٹنٹ کی ہیں لہذا ایل آر ایچ ایم ٹی آئی کو بھرتی ہونے والے افراد کو تقرر نامے جاری کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

فاضل عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر دائر رٹ پٹیشن منظور کر لی ۔