07-04-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ڈسٹرکٹ ناظم ایبٹ آباد ملک شیر بہادر سمیت متعدد تحصیل اور ڈسٹرکٹ ناظمین کی نااہلی کو درست قرار دے دی ہے ۔

جسٹس روح الاآمین اور جسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے لوکل گورنمنٹ انتخابات میں مختلف سیاسی جماعتوں کے ٹکٹوں پر منتخب ہونے والے تحصیل اور ڈسٹرکٹ ناظمین کی جانب سے پارٹی پالیسی کے برعکس ووٹ دینے کی پاداش میں الیکشن کمیشن کی جانب سے ان کی نااہلی کے اقدام کا درست قرار دیتے ہوئے محفوظ کردہ فیصلہ سنا سنایا ۔عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ جب ایک کونسلر پارٹی ٹکٹ پر منتخب ہو جائے تو اس پارٹی کے منشور اور اس کے فیصلوں پر عمل درآمد کویقینی بنانے کا پابند ہے ۔

واضح رہے کہ رٹ درخواستیں ڈسٹرکٹ ناظم ایبٹ آباد ملک شیر بہادر سمیت لکی مروت سے تعلق رکھنے والے جے یو آئی کے مولانا محمد اظہر اور متعدد کونسلرز نے دائر کی تھیں جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ وہ دو ہزار پندرہ کے لوکل گورنمنٹ انتخابات میں منتخب ہوئے اور اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف ، جمعیت علماء اسلام اور مسلم لیگ ن کی ٹکٹ انہیں دی گئی تھی تاہم بعد میں درخواست گزاروں کو اس بناء پر الیکشن کمشن نے نااہل قرار دیاکہ انہوں نے پارٹی منشور کے برعکس یا تو ووٹ دیا ہے یا پارٹی کے مفاد کے برعکس کام کیا ہے ۔عدالت نے دلائل مکمل ہو نے پر فیصلہ محفوظ کر دیا تھا جو سناتے ہوئے فاضل عدالت نے الیکشن کمیشن پاکستان کے فیصلہ کو درست قرار دے کر درخواستوں گزاروں کی نااہلی برقرار رکھی اور ان کی نااہلی کے خلاف درخواستیں خارج کر دیں ۔