13-09-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ڈینگی پر قابو پانے کےلئے محکمہ صحت کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے حکم دیا کہ اگلے سال ڈینگی کی روک تھام کےلئے ابھی سے کوشیش کی جائیں اور فنڈز رکھے جائیں تاکہ عوام کو مزید تکالیف سے بچایا جا سکے ۔

جسٹس قیصر رشید اور جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے سیف اللہ ایڈوکیٹ کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی ۔ دوران سماعت سیکرٹری ہیلتھ عابد مجید اور ڈپٹی کمشنر پشاور ثاقب رضا اسلم نے عدالت کوبتایا کہ محکمہ صحت ڈینگی پر قابو پانے کےلئے ہیلتھ ایمرجنسی کے تحت زیادہ سے زیادہ کام کر رہی ہے تینوں اسپتالوں میں علاج معالجہ کی سہولیات کے بارے میں یہ نہیں کہتا کہ سب ٹھیک ہے لیکن اسپتالوں میں بروقت علاج معالجہ کی سہولت فراہم کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے ۔

عدالت نے حکم دیا کہ ڈینگی کے خاتمہ کےلئے جہاں سے مدد لی جا سکتی ہے لی جائے اور ضلعی انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ ہنگامی بنیادوں پرڈینگی کی روک تھام کے لئے اقدامات کریں ۔