05-06-2018

آئندہ عام انتخابات میں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے مرحلے میں اپیلٹ ٹربیونلز کو از خود نوٹس کا اختیار دیا گیا ہے ۔

الیکشن کمیشن کے مطابق کسی نادہندہ قرض معاف کرانے ، یوٹیلٹی بلوں کی عدم ادائیگی اور ٹیکس چوری کے کاغذات کی نامزدگی منظور ہونے کی صورت میں ٹربیونلز کو ٹھوس دستاویزات ملنے پر اس امیدواروں کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے طلب کرنے کااختیار بھی دیا گیا ہے ۔
الیکشن ایکٹ 2017کی شق 63کی ذیلی شق 4میں واضح کیا گیا ہے کہ ریٹرننگ آفیسر کے پاس کسی امیدوار کے کاغذات نامزدگی منظور ہو جائے اوراس کے خلاف ٹربیونل میں کوئی اپیل دائر بھی نہ کی گئی تو الیکشن ٹربیونلز جو ریٹرننگ افسران کی طرف سے کاغذات نامزدگی منظور یا مسترد کئے جانے کے خلاف اپیلوں کی سماعت کر رہا ہو گا ایسے شخص کے خلاف ٹھوس دستاویزات لانے پر سخت کاروائی کی جائیگی ۔