26-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے کالعدم تنظیم کے سابق ترجمان مسلم خان کو ملٹری کورٹ سے ملنے والی سزا کو معطل کرتے ہوئے وزارت داخلہ اور متعلقہ حکام سے ریکارڈ طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے مسلم خان کی اہلیہ کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ اس کے شوہر پر الزام ہے کہ وہ سیکیورٹی فورسز پر حملوں اور چینی انجینئر ز و مقامی افراد کے اغواء میں ملوث تھا جس پر ملٹری کورٹ نے اسے سزائے موت کی سزا سنائی ہے لہذا ان کی سزا کالعدم قرار دی جائے ۔ فاضل عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد ملزم مسلم خان کی سزائے موت معطل کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے ریکارڈ طلب کرلیا ۔