07-07-2017

پشاور ہائی کورٹ کے جج جسٹس قیصر رشید نے کہا ہے کہ گرانفروشوں اور ملاوٹ کرنے والے انسانی جانوں کے دشمن ہیں ان کے خلاف فوری کاروائی کی جائے کیونکہ عوام کو ایسے عناصر سے بچانا ضلعی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے تین ایم پی او کے تحت گرفتار کباب فروشوں کے وارنٹ گرفتاری کرنے کے خلاف دائر رٹ درخواست کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ گرانفروش اور ملاوٹ کرنے والے انسانی زند گیوں کے ساتھ کھیلتے ہیں اور اس پر ہم آنکھیں بند نہیں کر سکے ۔

جسٹس قیصر رشید اورجسٹس یونس تہیم پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے دائر رٹ کی سماعت کی جس میں ضلعی انتظامیہ کے اقدامات کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ۔ دوران سماعت ڈی سی پشاور ثاقب رضا اسلم عدالت میں پیش ہوئے اور بتایا کہ ضلعی انتظامیہ گرانفروشوں اور ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف مسلسل کاروائیاں کر رہی ہیں جبکہ درخواست گزاروں پر بھی غیر معیاری کباب مہنگے داموں فروخت کرنے کا الزام ہے۔ جس پر جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیئے کہ عدالتیں غیر ضروری طور پر ان معاملات میں مداخلت نہیں کریں گی ۔ قانون میں آپ کے پاس اختیار ہے اور ایسے عناصر کے خلاف بڑے آپریشن کے لئے اقدامات اٹھائیں ۔

فاضل عدالت نے ڈی سی او کو ہدایت کی کہ وہ درخواست گزاروں سے پانچ لاکھ دو نفری ضمانت لیں اور پھر بھی اگر غیر معیاری اور گراں اشیاء فروخت کریں تو گرفتار کر لیا جائے ۔