21-03-2017

پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے گریڈ انیس کے افسر کی بجائے گریڈ اٹھارہ  کے افسر کو سیکرٹری لوکل کونسل بورڈ مقرر کرنے کے خلاف دائر رٹ درخواست پر صوبائی وزیر بلدیات اور دیگر متعلقہ محکموں کےحکام سے جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس قیصر رشید اورجسٹس غضنفر علی خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے لوکل کونسل بورڈ میں تعینات گریڈ انیس کے آفیسر عظمت اللہ وزیر  کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار  سیکرٹری لوکل کونسل بورڈ  کے امیدواروں کی سینارٹی پر ٹاپ پر تھا تاہم صوبائی حکومت نے اسے نظر انداز کرکے گریڈ اٹھارہ کے افسر حضر حیات کو سیکرٹری لگایا ہے جو کہ سینیارٹی لسٹ میں چونتیس نمبر پر آتا ہے اس طرح صوبائی حکومت نے قوانین کی خلاف ورزی کی ہے ۔

صوبائی حکومت کی جانب سے جواب میں کہا گیا کہ سیکرٹری لوکل کونسل کی تقرری سلیکشن بورڈ نے کی ہے جو مروجہ قوانین کے تحت کی گئی ۔

عدالت نے دلائل کے بعد متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا اور سماعت تین اپریل تک ملتوی کردی ۔