18-08-2017

پشاور ہائی کورٹ نے آٹھ سال قبل ہنگو میں بمباری کے واقعہ میں زخمی ہونے والے افراد کا ریکارڈ طلب کرکے سماعت ملتوی کردی ہے ۔

جسٹس اکرام اللہ خان اورجسٹس عبدالشکور پر مشتمل د ورکنی بنچ نے دائر توہین عدالت درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ دو ہزار نو میں غلطی سے ضلع ہنگو کے گاوں زرگری میں پاکستانی جیٹ طیاروں سے بمباری کی گئی جس میں کئی افراد شہید و زخمی ہوئے جنہیں معاوضہ کی ادائیگی عدالتی احکامات کے باوجود نہیں کی جا رہی جو توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے ۔ دوران سماعت ڈی سی ہنگو نے عدالت کوبتایا کہ واقعہ میں شہید ہونے والے افراد کے لواحقین کو باقی کے چونتیس لاکھ روپے ادا کر دیئے گئے ہیں تاہم واقعہ کے زخمیوں کو تاحال معاوضہ ادا نہیں کیا گیا ہے۔

فاضل عدالت نے دائررٹ کی سماعت اگلی پیشی تک ملتوی کرتے ہوئے واقعہ میں زخمی ہونے والے افراد کا ریکارڈ طلب کرلیا۔