خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں صوبہ کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے نئے وکلاء کےلئے پانچ روزہ خصوصی تربیتی پروگرام جاری ہے۔

پہلے پانچ روزہ تربیتی پروگرام میں پشاور سمیت صوبہ خیبر پختونخوا کے مختلف اضلاع کے ینگ وکلاء شریک ہیں ۔ تربیتی پروگرام کی افتتاحی تقریب خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں منعقد ہوئی جس میں ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمدمسعود خان ، ڈین فیکلٹی خواجہ وجہہ الدین ، سینئر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن محمد آصف خان ، سینئر ڈائریکٹر ریسرچ اینڈ پبلی کیشن شیراز نور ثانی اور ڈائریکٹر انسٹرکشن ضیاء الرحمان سمیت دیگر نے شرکت کی ۔

ڈائریکٹر جنرل جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے شرکاء کو خوش آمدید کہتے ہوئے ینگ وکلاء کی پانچ روزہ تربیتی پروگرام کے اغراض و مقاصد بیان کئے ۔ ان کا کہنا تھا کہ چیئرمین خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی کی خصوصی ہدایات کی روشنی میں صوبہ کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے شعبہ وکالت میں نئے وکلاء کی تربیت کےلئے خصوصی کورس مرتب کیا گیا ہے جس کے تحت تین سو سے زائد نئے وکلاء کو تربیت دی جائے گی ۔

ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی نے کہا کہ پانچ ، پانچ دونوں پر محیط ان خصوصی تربیتی پروگراموں میں شعبہ وکالت میں قدم رکھنے والے نئے وکلاء کو پریکٹیکل ایکسرسائزز کروائے جائیں گے کیونکہ لاء کالجز میں پریکٹیکل پر بہت کم توجہ دی جاتی ہے اور ان نئے وکلاء کےلئے یہ ضروری امر ہے کہ وہ شعبہ وکالت کے بنیادی باتوں سے باخبر ہو اور ان کے پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو نکھارا جا سکے ۔

ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی محمد مسعود خان نے کہا کہ خیبر پختونخوا جوڈیشل اکیڈمی پشاور میں سرچ سیل کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے جو ہائی کورٹ کی مختلف امور میں معاونت فراہم کرے گا ۔

بعد ازاں پانچ روزہ تربتیی پروگرام کے پہلے اور دوسرے دن ریسورس پرسنز  یوسف رضا خلیل ، ذوالفقار خآن ، بیرسٹر ڈاکٹر عدنان خان ، جسٹس ریٹائرڈ عبدالطیف ، اشفاق احمد اور سینئر قانون دان اختر علی خان نے مختلف موضوعات پر لیکچرز دیئے اور پریکٹکل ایکسرسائز کروائیں ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔