31-03-2018

پشاور ہائی کورٹ نے عدالتی احکامات کے باوجود  شہری کوبھرتی نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر ڈی جی صحت خیبر پختونخوا کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا ہے۔

 جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس اکرام اللہ خان  پر مشتمل پشاور ہائی کور ٹ کے دو رکنی بنچ نے درخواست گزار آصف فرہاد کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی ۔ جس میں موقف اختیار کیا گیا  کہ درخواست گزار کے والدمحکمہ صحت میں نائب قاصد تھے، اور 2012ء میں ریٹائرڈ ہوئے تھے، جس کے بعد درخواست گزار نے ان کی جگہ ایمپلائز سنز کوٹہ کے تحت ان کو بھرتی کرنے کے لیے درخواست دے دی تاہم ان کو نظر انداز کردیا گیا۔ درخواست گزار نے ہائی کورٹ میں رٹ پٹیشن دائر کی جس پر عدالت نے نو جنوری دو ہزار اٹھارہ کو درخواست گزار کو بھرتی کرنے کا حکم جاری کیا تھا لیکن اس کے باوجود بھی درخواست گزار کو بھرتی نہیں کیا جارہاہے۔ عدالت نے توہین عدالت درخواست پر ڈی جی  اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ صحت کو شوکاز نوٹس جاری کردیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔