21-05-2018

قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں فاٹا کو خیبر پختونخوا میں  ضم کرنے کی توثیق کردی گئی ہے۔ اجلاس میں آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کو انتظامی اور مالی خود مختاری دینے کا فیصلہ اور اگلے پانچ سال تک ٹیکس فری قرار دینے کی منظوری دے دی گئی۔

 وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔اجلاس میں کشمیر اور فلسطین کا مسئلہ بین الاقوامی فورمز پر اٹھانے پر اظہار اطمینان کیا گیا۔

قومی سلامتی کمیٹی نے فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کی اصولی منظوری دیتے ہوئے متعلقہ وزارتوں کو آئینی قانونی اور انتظامی تبدیلیاں کرنے کی ہدایات بھی جاری کی گئی۔

کمیٹی نے آئندہ دس سالوں میں فاٹا کے لئے خصوصی فنڈ جاری کرنے کی منظوری بھی دی، جبکہ یہ فنڈز خیبر پختونخوا کے کسی اور علاقے میں استعمال نہیں ہوسکیں گے۔