15-02-2017

سپریم کورٹ نے لوکل گورنمنٹ بلوچستان کے ترقیاتی فنڈز میں اربوں روپےکی خورد برد مقدمہ کے ملزم اور وزیر اعلی بلوچستان کے سابق مشیر خالد لانگو  کی نیب کے مقدمہ میں ضمانت بعد از گرفتاری کی درخواست مسترد کر دی اور قرار دیا کہ نیب اور ملزم مشتاق رئیسانی سکینڈل سے متعلق تفصیلی فیصلہ جاری کیا جائے گا جس میں نیب کی کارکردگی کا احاطہ کیاجائے گا۔

جسٹس دو ست محمد خان کی سربراہی میں جسٹس قاضی فائز عیسی اور جسٹس مقبول باقر پر مشتمل سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔ دوران سماعت جسٹس دو ست محمد خان نے ریمارکس دیئے کہ نیب سمیت تمام ادارے تباہی کے دہانے تک پہنچ چکے ہیں تو ایسی صورت میں عدالتو ں کو کردار  ادا نہیں کر نا چاہیئے؟ عدالت کو بتایا جائے کہ ملزمان سے اربوں روپے کی رقم برآمد ہوئی لیکن نو ماہ سے ریفرنس  دائر کرنے میں کیوں تاخیر کی گئی ۔