20-06-2018

صوبائی دارلحکومت پشاور میں چالیس ہزار سے زائد رکشوں ، مزدوں اور ویگنوں کے لائسنسز اور پرمٹ منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔

حکام کےمطابق  ریپڈ بس منصوبے کامرحلہ مکمل ہونے کے بعد بیس جولائی کے بعد پہلے مرحلے میں غیر قانونی چالیس ہزار سے زائد رکشوں کے پرمٹ منسوخ کر دیئے جائینگے اور ایسے رکشوں کے خلاف بھی کاروائی کی جائیگی جن کے پرمٹ پشاور کے نہیں ہے جبکہ ایسے رکشوں کے خلاف بھی کاروائی ہو گی جو کہ ایک ہی نمبر پر دو دو رکشے چل رہے ہیں ۔