07-06-2018

 سپریم کور ٹ نے پشاورسمیت صوبے کے بیشتر علاقوں میں بجلی کی غیراعلانیہ اورطویل لوڈشیڈنگ پر پیسکو کے سربراہ  پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے  خیبرپختونخوامیں طویل اورغیراعلانیہ لوڈشیڈنگ پروفاق سے جواب  طلب  کر لیا ہے جبکہ بجلی پیداکرنیوالی کمپنیوں کو ریکارڈ سمیت عدالت طلب کرلیا ۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس  میاں ثاقب نثاراورجسٹس مشیر عالم پرمشتمل دو رکنی  بنچ نے پن بجلی منصوبوں سے متعلق کیس کی سماعت شروع کی تو اس موقع پر پیسکو کی جانب سے رپورٹ پیش کی گئی جس میں عدالت کوبتایاگیاکہ خیبرپختونخوامیں اس وقت بجلی کی پیداوار 21سو میگاواٹ ہے جبکہ ڈیمانڈتین ہزار ہے جبکہ انفراسٹرکچرکمزورہے جو مزید بجلی نہیں بناسکتا جس پرچیف جسٹس نے برہمی کااظہارکرتے ہوئے کہاکہ بیس سال ہوگئے ہیں مگرآپ اپناانفراسٹرکچرٹھیک نہیں کرسکے ہیں ۔