25-04-2018

پشاور ہائی کورٹ نے گزشتہ دو دن ہڑتال کرنے والے نجی سکولوں کو اپنی تحویل میں لینے اور ان کے اکاونٹس سیل کرنے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔

پشاور ہائی کورٹ کے جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس محمد ایوب خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے نجی سکولوں کے فیسوں سے متعلق درخواست پر سماعت کی۔ عدالت کو بتایا گیا کہ ہائی کورٹ نے گزشتہ سال نومبرمیں فیصلہ دیا تھا کہ نجی سکولز ہر سال فیسوں میں صرف تین فیصد اضافہ کرسکتے ہیں اس سے زیادہ نہیں۔صوبے کے تمام نجی سکولز فیسوں میں دس فیصد یا اس سے زائد اضافہ کرتے ہیں اور ہائی کورٹ کے احکامات نہیں مان رہے ہیں جبکہ بچوں کو تعلیمی سہولیات بھی نہیں دے رہے ہیں۔ ایجوکیشن ریگولیٹری اتھارٹی خیبر پختونخوا کے منیجنگ ڈائریکٹر ظفر علی شاہ نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے ایسے سکولوں کے خلاف کاروائی شروع کردی ہے۔ عدالت نے حکم دیا کہ ایسے تمام سکولوں کے خلاف کاروائی کی جائے، ان کے اکائونٹس سیل کرنے اور ہڑتال کرنے والے سکولوں کو اپنی تحویل میں لینے کے احکامات بھی جاری کردیئے ہیں۔